| | | |  


بِسْمِ اللهِ الرَّ حْمٰنِ الرَّ حِیْم

کتاب المعاشرہ

ہدایت(۴۸۱)حضرت عثمانسے روایت ہے فرمایا رسول اللهﷺنے آدم زاد کے معاشرہٴ حیات کے لئے تین چیزیں کافی ہیں، رہنے کے لئے گھر، تن پوشی کے لئے صاف ستھرا کپڑا، کھانے کے لئے حلال ماکولات اورپاکیزہ مشروبات۔ (ترمذی)
   (۴۸۲)عبیدالله بن محصنسے روایت ہے فرمایا رسول اللهﷺنے جوشخص اس حال میں صبح کرے کہ اپنی جان کی طرف سے بے خوف ہو یعنی تندرست ہو اور ایک دن کھانے کا سامان اس کے پاس ہو تو گویا اس کے لئے دنیا کی نعمتیں جمع کردیگئیں اور ساری دنیا اس کو دیدی گئی۔ (ترمذی)
زہد(۴۸۳)ابی ذرسے روایت ہے فرمایا رسول اللهﷺنے جس بندے نے دنیا میں زہد اختیار کیا الله تعالیٰ نے اس کی دل میں حکمت پیدا کی، اس کی زبان کو گویا کیا، دنیا کے عیوب دنیا کی بیماریوں اور ان بیماریوں کا علاج اس کو سکھایا اور پھر اس کو دنیا کی سلامتی کے ساتھ دارالسلام کی طرف لے گیا۔ (بیہقی)
زاھد(۴۸۴)ابی ہریرہسے روایت ہے فرمایا رسول اللهﷺنے جو شخص سوال کی ذلت سے بچنے، اپنے اہل و عیال پر خرچ کرنے اور ہمسایہ پڑوسی کے احسان و سلوک کرنے کی نیت سے جائز طریقوں اور حلال ذریعوں سے ضروریات زندگی مہیا کرے وہ قیامت کے دن اس صورت میں اٹھایا جائے گا کہ اس کا چہرہ چودھویں رات کے چاند کی مانند چمکتا ہوگا۔ (بیہقی)
بیوی(۴۸۵)ابو امامہسے روایت ہے فرمایا رسول اللهﷺنے بندہٴ مومن تقویٰ کے بعد جو چیز سب سے بہتر اپنے لئے انتخاب کرتا ہے وہ ایک ایسی نیک بخت بیوی ہے جس کو وہ کسی بات کا حکم دے تو فوراً تعمیل کرے۔ اس کی طرف دیکھے تو وہ دل خوش کرے اور اپنی عصمت اور شوہر کے مال کی حفاظت کرے۔ (ابن ماجہ)
   (۴۸۶)عبدالله بن عمرسے روایت ہے فرمایا رسول اللهﷺنے دنیا کی بہترین متاع نیک بخت عورت ہے۔ (مسلم)
متعہ(۴۸۷)ابن عباسسے مروی ہے ایّام جاہلیت میں یہ رواج تھا کہ جب کوئی مرد کسی شہر میں جاتا اوروہاں اس کی شناسائی نہ ہوتی تو وہ اتنی مدت کے لئے وہاں کسی عورت سے متعہ کرلیتا تھا جتنی مدت اس کو ٹھیرنا ہوتا وہ عورت اس کے سامان کی حفاظت کرتی اور کھانا پکاتی اور مثل بیوی کے معاشرت کرتی تھی۔ ابتدائے اسلام میں بھی متعہ کا رواج تھا۔ جب یہ آیت نازل ہوئی "اِلاعلیٰ ازواجھم اوماملکت ایمانھم" تو پھر نکاحی بیویوں اور شرعی لونڈیوں کے سوا سب عورتیں حرام ہوگئیں اور متعہ ناجائز قرار پایا۔ (ترمذی)
نکاح(۴۸۸)ابن عباسسے روایت ہے فرمایا رسول اللهﷺنے نکاح کے سوا کوئی چیز ایسی نہیں جو دو اجنبی ہستیوں کے درمیان ایسی محبت پیدا کرے کہ ایک جان دو قالب کا مصداق ہوں۔ (ابن ماجہ۔ دارمی۔ احمد)
ہدایت(۴۸۹)مغیرہ بن شعبہسے مروی ہے کہ میں نے ایک عورت منگنی کا ارادہ کیا۔ رسول اللهﷺنے مجھ سے فرمایا کہ تم نے اس کو دیکھا ہے؟ میں نے عرض کیا نہیں دیکھا، فرمایا جن دو اجنبیوں میں محبت پیدا کی جائے ان کو باہم ایک نظر دیکھ لینا چاہیے (ترمذی، نسائی، ابن ماجہ، دارمی، احمد)
   (۴۹۰)عبدالله بن مسعودسے روایت ہے فرمایا رسول اللهﷺنے ہر وہ نوجوان مرد جو نفقہ و مہر کی قوت رکھتا ہو اس چاہیے کہ نکاح کرے اس لئے کہ نکاح بدکاری سے بچاتا ہے۔ (مسلم و بخاری)
   (۴۹۱)ابوسعیدسے اور ابن عباسسے روایت ہے فرمایا رسول اللهﷺنے جس شخص کے گھر میں بچہ پیدا ہو اس کو چاہیے کہ بچہ کا اچھا نام رکھے اس کو ادب سکھائے پھر وہ بالغ ہوتو اس کا نکاح کردے اگر بالغ ہونے پر نکاح نہ کیا اور وہ بدکاری میں مبتلا ہوا تو اس کا گناہ باپ پر ہوگا۔ (بیہقی)