| | | |  


بِسْمِ اللهِ الرَّ حْمٰنِ الرَّ حِیْم

کتاب الدعوات

دعاکی عظمت(۲۵۳)انسسے روایت ہے فرمایا رسول الله ﷺنے کہ دعا عبادت کا مغز ہے۔ (ترمذی)
   (۲۵۴)ابوہریرہسے روایت فرمایا رسول الله ﷺنے الله تعالیٰ کے نزدیک دعا سے زیادہ کوئی چیز باعظمت نہیں۔ (ترمذی۔ ابن ماجہ)
   (۲۵۵)ابوہریرہسے روایت ہے فرمایا رسول الله ﷺنے جس شخص کو یہ بات پسند کہ سختیوں کے وقت الله تعالیٰ اس کی دعا قبول فرمائے اور اس کو چاہئے کہ فراخی اور خوش حالی کے وقت کثرت سے دعا مانگا کرے۔ (ترمذی)
   (۲۵۶)معاذ بن جبلسے روایت ہے فرمایا رسول الله ﷺنے کہ بندوں کے اعمال میں ذکر الٰہی سے بہتر اور عذاب الٰہی سے نجات دینے والا کوئی عمل نہیں۔ (موطا۔ ترمذی۔ ابن ماجہ)
فضول باتیں کرنا دل کو غافل بناتاہے
   (۲۵۷)ابن عمرسے روایت ہے فرمایا رسول الله ﷺنے کہ الله جل جلالہ کے ذکر کے سوا فضول باتیں نہ بنایا کرو کیونکہ ذکر الٰہی کے سوا کثرت سے بکواس کرنا دل کو سخت کر دیتا ہے اور وہ لوگ جو ذکر الٰہی سے غافل ہیں بہت شقی القلب ہیں۔ (ترمذی)
شیطانی وسواس(۲۵۸)ابن عباسسے روایت ہے فرمایا رسول الله ﷺنے شیطان انسان کے دل کی تاک میں لگا رہتا ہے، جب کوئی شخص ذکر الله دل سے کرتا ہے تو شیطان پیچھے ہٹ جاتا ہے اور جب ذکر الٰہی سے کوئی شخص غافل ہوتا ہے تو شیطان وسوسے پیدا کرتا ہے۔ (بخاری)
افضل الاذکار(۲۵۹)ابوذرسے روایت ہے رسول الله ﷺسے پوچھا گیا کہ کون سا ذکر بہتر ہےفرمایا سُبْحَانَ اللهِ وَالْحَمْدُ ِللهِ وَلَا ٰ اِلٰہَ اِلَّا اللهُ کہنا سب اذکار سے افضل ہے (مسلم)
   (۲۶۰)جابرسے روایت ہے فرمایا رسول الله ﷺنے بہترین ذکر لاالہٰ الا الله اور بہترین دعا ہے الحمد لله (ترمذی۔ ابن ماجہ)
حمد(۲۶۱)ابن عباسسے روایت ہے فرمایا رسول الله ﷺنے قیامت کے دن جن لوگوں کو جنت میں سب سے پہلے داخل کیا جائے گا وہ لوگ ہوں گے جنہوں نے راحت و خوشی اور تکلیف و غم کی ہر حالت میں الحمدلله کہا۔ (بیہقی)
تسبیح(۲۶۲)یسیرہسے روایت ہے ہم سے رسول الله ﷺنے فرمایا کہ تم سُبُّوْحٌ قُدُّسٌ رَبُّنَا وَ رَبُّ الْمَلآئِکَتِہ وَالرُّوحُ پڑھنے کو اپنے اوپر لازم سمجھو اور اپنی انگلیوں پر گنتی کر اس میں غفلت نہ کرنا۔ (ترمذی۔ ابوداؤد)
   (مذکورہ تسبیح بعد نماز عشاء پڑھی جاتی ہے ستر بار انگلیوں پر شمار کرکے)
تسبیح اعظم(۲۶۳)سعد بن وقاصسے روایت ہے ایک صحرا نشین بزرگ نے رسول الله ﷺکی خدمت میں حاضر ہو کر عرض کیا یارسول الله ﷺمجھے کوئی خاص چیز تعلیم فرمائیے جسے میں پڑھتا رہوں، ارشاد ہوا سُبْحَان الله رَبِّ الْعٰلَمِیْن پڑھا کرو۔ (مسلم)
   (یہ تسبیح اعظم بعد نماز مغرب ستر بار پڑھی جاتی ہے اس کو افضل النساء بیح بھی کہتے ہیں۔)
استغفار(۲۶۴)حضرت عائشہ صدیقہسے روایت ہے رسول الله ﷺجب کسی جگہ بیٹھتے تو چند کلمات زبان مبارک سے ادا فرماتے سبحانک اللّھم و بحمدک لا اله الا انتَ استغفرک واتوب الیک۔ (نسائی)
تسبیح جلیل(۲۶۵)حضرت علیکرم الله وجہ سے روایت ہے رسول الله ﷺسوتے وقت یہ کلمات پڑھا کرتے تھے۔ اللھم ربنا سبحانک وبحمدک لا الہٰ الا انت وحدک لاشریک لک۔ (ابوداؤد)
شیاطین کےشر سےبچنےکی دعا(۲۶۶)عمرو بن شعیبسے روایت ہے فرمایا رسول الله ﷺنے کہ جو شخص نیند میں ڈرتا ہو وہ سوتے وقت پڑھا کرے رب اعوذبک من ھمزات الشیاطین و اعوذبک رب ان یحضرون۔ (ترمذی)
افضل الذکر(۲۶۷)ابوسعیداور ابوہریرہسے روایت ہے فرمایا رسول الله ﷺنے جو شخص کہتاہے لاالہٰ الاالله وحدہ لاشریک لہ اس کو آگ نہ کھائے گی۔ (ترمذی۔ ابن ماجہ)
استغفار(۲۶۸)ابن عباسسے روایت ہے فرمایا رسول الله ﷺنے جو شخص استغفار کو اپنے اوپر لازم قرار دے لے تو الله تعالیٰ نے اس کے لئے ہر تنگی سے نکلنے کا راستہ نکال دیتا ہے اور ہر رنج و غم سے اس کو نجات دیتا ہے اور ایسی جگہ سے رزق بہم پہنچاتا جہاں سے اس کو گمان بھی نہیں ہوتا۔ (ابوداؤد۔ ابن ماجہ)
اسم اعظم(۲۶۹)انسسے روایت ہے میں رسول الله ﷺکے پاس مسجد میں بیٹھا تھا ایک شخص نے جو نماز پڑھ رہا تھا بعد نماز الله تعالیٰ کے اسم مبارک ذوالجلال والاکرام کے توسل سے دعا مانگی، رسول الله ﷺنے فرمایا اس شخص نے الله تبارک و تعالیٰ کے اس اسم اعظم کے ساتھ مانگی ہے جس کے توسل قبولیت حاصل ہوتی ہے۔ (ترمذی۔ابوداور۔ نسائی۔ ابن ماجہ)
   (حضرت نبی کریم علیہ الصلوات والتسلیم نے تسبیح، تحمید، تہلیل اور استغفار کی بہت تاکید فرمائی ہے، اکثر اہل سنت بعد نماز نماز تہجد ستر بار دعائے جلیلہ پڑھتے ہیں جو سب اذکار مقبولہ کی جامع ہے۔)
اَللّٰھُمَّ رَبَّنَا سُبْحٰنَکَ وَبِحَمْدِکَ لآ اِلٰہ الَّا َنْتَ وَحْدَکَ لَا شَرِیْک لَکَ اَنْتَ وَلِیُّنَا فَاغْفِرْلَنَا وَارْحَمْنَا اَنکَ اَنْتَ الَسّلَامُ یاذَوالُجَلَالِ وَالْاِکْرَامَ۔